موجودہ بحران کا ذمہ دار سابقہ حکومت کی”بدانتظامی”قراردیا  

شریف نے ہفتہ کو قومی اسمبلی کو بتایا کہ ’’آج کل ملک میں گزشتہ حکومت کی بدانتظامی اور نااہلی کی وجہ سے لوڈ شیڈنگ ہو رہی ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں 35 ہزار میگاواٹ بجلی پیدا کرنے کی صلاحیت ہے لیکن گیس اور تیل پر چلنے والے مختلف پاور پلانٹس کی بندش کے باعث ملک کے مختلف حصوں کو گزشتہ چند روز سے لوڈ شیڈنگ کا سامنا ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ چارج سنبھالنے کے فوراً بعد انہوں نے وزارت پٹرولیم اور توانائی کے حکام سے لوڈ شیڈنگ کے معاملے پر بریفنگ لی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ملک کو تقریباً 6000 میگاواٹ ہائیڈل پاور کی کمی کا سامنا ہے، جس کا تعلق گلیشیئرز کے پگھلنے اور پانی کی دستیابی سے ہے۔ اس کے باوجود، انہوں نے کہا، ملک کے پاس ملک کی ضروریات پوری کرنے کے لیے کافی بجلی موجود ہے۔

مسٹر شریف نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ کوئلے سے چلنے والے اور سولر پاور پلانٹس، جو چین پاکستان اقتصادی راہداری (CPEC) کے تحت لگائے گئے تھے، اور ساتھ ہی۔ LNG پلانٹس جو تقریباً 5000 میگاواٹ بجلی پیدا کر سکتے تھے، بند پڑے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ 1250 میگاواٹ بجلی پیدا کرنے کی صلاحیت رکھنے والے پاور پلانٹس میں سے ایک اور جو 2019 میں بجلی پیدا کرنا شروع کرنا تھا ابھی تک شروع نہیں کیا گیا۔

وزیراعظم نے الزام لگایا کہ پی ٹی آئی کی سابقہ ​​حکومت نے توانائی کے معاملے پر کوئی توجہ نہیں دی، تیل اور گیس کی عدم دستیابی کے باعث کئی پاور پلانٹس بند ہو چکے ہیں۔

انہوں نے الزام لگایا کہ پچھلی حکومت نے ایل این جی نہیں خریدی جب اس کی قیمت صرف 3 ڈالر فی یونٹ تھی جو اب کئی گنا بڑھ کر 30 سے ​​35 ڈالر فی یونٹ تک پہنچ گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ 2015-16 کے دوران اس وقت کی مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے قطر کے ساتھ ایل این جی کی درآمد کا معاہدہ کیا تھا لیکن پی ٹی آئی حکومت نے اس میں خامیاں تلاش کرنا شروع کر دی تھیں۔ آج، انہوں نے کہا، یورپی ممالک کی طرف سے روس پر عائد پابندیوں کی وجہ سے کئی ممالک کو گیس آسانی سے دستیاب نہیں تھی۔

وزیراعظم نے کہا کہ پی ٹی آئی حکومت عوامی مسائل سے لاتعلق ہے، اور وہ ’’پتھر دل‘‘ ہے۔

تاہم انہوں نے ایوان کو یقین دلایا کہ نئی حکومت ملک کو درپیش مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔

مسٹر شریف نے پنجاب اسمبلی کے ڈپٹی سپیکر پر حملے کی بھی مذمت کی اور اسے صوبائی حکومت کی طرف سے ایک فاشسٹ اقدام قرار دیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں